Jump to content
URDU FUN CLUB

faizanoor

Active Members
  • Content Count

    436
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    29

faizanoor last won the day on June 16

faizanoor had the most liked content!

Community Reputation

985

Profile Information

  • Gender
    Female

Recent Profile Visitors

The recent visitors block is disabled and is not being shown to other users.

  1. شکریہ ڈیئر ایڈمن۔ ممکن ہے ٹیکنیکلی آپ درست کہہ رہے ہوں ۔ مگر آپ کے انداز سے یوں۔لگا کہ جیسے آپکو میرا سوال کرنا پسند نہیں آیا اور جواب دینے کی زحمت آپکو ناگوار گذری ہے۔۔ چلیں ٹھیک ہے مسٹر ایڈمن۔ ایسے ہی سہی۔ آئندہ اس فورم پر میری طرف سے کوئی سوال کوئی کمنٹ نہیں آئیگا۔ امید ہے آپ اخلاقی جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے میرے اس آخری کمنٹ کو اپروو فرمائینگے۔ شکریہ
  2. کوئی بات نہیں جناب۔ انھیں اٹھانے دیجئے۔ کیونکہ یہ نادان نہیں جانتے کہ یہ جن کے اٹھانے کی کوشش کررہے ہیں انھیں اس کی چنداں ضرورت نہیں۔
  3. الٹی ہو گئیں سب خواہشیں کچھ نا درخواستوں نے کام کیا۔!!! قارئین کا اصرار اور خواہش تھی کہ ضوفی با عصمت رہے اور کنواری ہی یاسر کو ملے جیسے کہ وہ کوئی لڑکی نہیں بلکہ ایک ٹرافی ہو جو ونر کو چمکتی ہوئی ہی ملے۔ لیکن وہی ہوا جو ہونا چاہئے تھا اور یہی کہانی کی ڈیمانڈ بھی تھی۔ اگر ایسا نہ ہوتا تو کہانی پھسپھسی رہ جانی تھی۔ بہرحال کہانی اب دو تین اپڈیٹ میں اپنا اختتام چاہتی ہے۔
  4. اپڈیٹ حسبِ توقع شہوت انگیز تھی۔ شمائلہ اور یاسر کا پارک والا منظر بالکل حقیقت لگا۔ یوں لگتا ہے کہ اس ایکشن پلان میں یاسر کیلئے اپنی جنسی خواہشات کو پورا کرنے کیلئے ایک اور نیا دروازہ کھل جائیگا۔ اور یہ دروازہ کھولے گی شمائلہ۔۔
  5. کس حیثیت سے؟ کیا آپ ایڈمن ہیں یا ایڈمن نے آپ کو یہ اختیارات دئیے ہیں ؟ کون قاری کس قاری سے اختلاف کررہا ہے اس سے آپ کو کیا لینا دینا؟ لہذا اپنے کام سے کام رکھیں مسٹر۔
  6. قانونِ فطرف ہے کہ ' جیسا کو تیسا ' کیا آپ اس سے اختلاف کرینگے؟ یاسر نے جن لڑکیوں سے اب تک سیکس کیا ہے ان میں سے میرے علم کے مطابق صرف دو خواتین شادی شدہ تھیں باقی سب کنواری یا غیر شادی شدہ۔ جو کہ ظاہر ہے کہ اب اپنے شوہروں کو کنواری نہیں ملے گیں۔ تو یاسر بھی حقدار نہیں کہ اس کو کنواری بیوی ہی ملے۔ جیسے وہ لڑکیوں کا کنوارہ پن خراب کرتا آیا ہے تو اسے اب مکافاتِ عمل کیلئے تیار رہنا ہوگا۔ بات رہی ضوفی کی تو اگر یاسر کو اس سے واقعی محبت ہے تو وہ ضوفی کو ہر صورت اپنائے گا چاہے وہ کنواری ہو یا نہیں۔ کیونکہ یاسر نے محبت ضوفی سے کی ہے اس کے جسم سے نہیں،اگر اسے ضوفی کا جسم ہی چاہئے ہوتا وہ یاسر کیلئے مشکل نہیں تھا۔ کچھ لوگ کہہ رہیں ہیں کہ ضوفی کا کیا قصور ہے کہ اس کی عفت سلامت نہ رہے؟ ان سے میرا سوال ہے کہ جن لڑکیوں کی عصمت دری کی جاتی ہے کیا انکا کوئ قصور ہوتا ہے؟ نہیں۔ بلکہ ان کو انکے کسی اپنے کے قصور کی سزا ملتی ہے۔ ضوفی کیساتھ بھی اگر ایسا کچھ ہوا تو وہ یاسر کے کئے کی سزا ہوگی۔ اس کیلئےویسے بھی اتنا حوالہ کافی ہے کہ پاکیزہ مردوں کیلئے پاکیزہ عورتیں اسکا مطلب یہ نہیں کہ واقعی ضوفی کیساتھ کچھ ہونے جارہا ہے کیونکہ رائٹر کیا سوچ رہا ہے یہ صرف وہی جانتا ہے۔
  7. سر دل پر تو آپ لے گئے ہیں۔ اس لئے ذاتی حملہ کیا ہے آپ نے۔ بائی دا وے اختلاف رائے کو برداشت آپ نے بھی نہیں کیا وگرنہ اس طرح کے ذاتی حملے کی ضرورت پیش نہیں آتی آپ کو۔ مجھے محسوس ہورہا ہے کہ ڈسکشن اب غلط رخ اختیار کرتی جارہی ہے اور نوبت اب پرسنل اٹیک تک آگئی ہے۔ اس سے پہلے کہ ایڈمن کی جانب سے کوئی وارننگ جاری ہو جو کہ جاری ہونی چاہئے میری طرف سے اب اس معاملے پر کوئی کمنٹ نہیں آئیگا۔
  8. آپ کا جو بھی مطلب ہوگا مجھے اس سے کوئی غرض نہیں۔ البتہ کہانی بہت اچھے اسلوب میں آگے بڑھ رہی ہے۔ لکھنے والے کو اپنے انداز میں لکھنے دیجئے وگرنہ خود کچھ لکھ لیجئے۔ ایک تخلیق کار ہی بہتر جانتا ہے کہ اسے اپنی تخلیق کو کہاں کیسے استعمال کرنا ہے۔
  9. یہ اخلاقیات کا مظاہرہ صرف ضوفی کے ساتھ ہی کیوں؟ نسرین کا کیا قصور تھا؟ شمائلہ،مہرین ،فرحت، اور مہری کا کیا قصور تھا۔ یاسر کی خالہ زاد بہنوں اور انکی ایک کزن اور ایک محلہ دار لڑکی ان سب کے موقع پر اخلاقیات کیا تیل لینے چلی گئی تھی،انسانی جذبات کا سرد پڑ گئے تھے؟ میں نے کہا نا قارئین ضرورت سے زیادہ جذباتی ہو رہے ہیں تو آپ اپنا کمنٹ خود پڑھ لیجئے ۔ آپ خوامخواہ ایک کردار کو لیکر اتنے جذباتی ہورہے ہیں۔
  10. ویسے میرا ایک مشورہ ہے اس کہانی کے رائٹر کیلئے کہ جوگ زیادہ جذباتی ہو رہے ہیں ان کیلئے آخری اپڈیٹ لکھ دیں جس میں ضوفی کو باعصمت پیش کرکے یاسر کے ساتھ بیاہ دیں۔ اور کہانی ختم کردیں۔ باقی جو اس کہانی کو ایک کہانی کی طرح ہی پڑھ رہے ہیں جیسے کے میں، ان کیلئے اس کہانی کو جہاں تک چلانا پڑے چلائیں۔ چاہے اس میں ضوفی کو بار بار جنسی عمل سے گذرنا پڑے۔
  11. لگتا ہے سب سے زیادہ جذبات آپ ہی کے ہیں۔ آپ نے کہا کہ اگر قارئین قیاس آرائ نہیں کرینگے تو کہانی کیسے بنے گی۔ اچھا تو جناب آپ کے مطابق کہانی قیاس آرائ سے بنتی یے ۔ رائٹر تو پھر بے وقوف ہوا نا جو اتنی محنت کررہا ہے۔ ذہن میں پلاٹ ترتیب دینا پھر اس پہ سین تشکیل دینا،مکالمے لکھنا، یہ سب تو بی کار ہوا کیونکہ کہانی تو آپ کی قیاس آرائیوں سے بنتی ہے۔آپ فرمارہے ہیں کہ اگر ضوفی کے ساتھ ایسا ہوا تو کہانی میں دم نہیں رہیگا۔ تو جناب پھر ایسا کریں کہ آپ ایک اپڈیٹ اپنی توقعات کے مطابق لکھ دیں جیسا آپ ضوفی کے متعلق چاہتے ہیں کہ ایسا ہو۔ ہم بھی اپڈیٹ کے انتظار سے بچ جائینگے اور آپ بھی اپنی مرضی کے مطابق ضوفی کے کردار کو چلا لینگے۔ آپ نے بات کی ایک ڈرامہ سیریل میرے پاس تم ہو کی۔ چلیں میرے ایک سوال کا جواب دیں کہ کیا آپ کو امید تھی کہ سیریل کے آخر میں دانش مر جائیگا؟ نہیں نا ؟ مگر اس کردار کو مرنا پڑا کیونکہ اسکا مرنا ڈرامے کے پلاٹ کا حصہ تھا۔ کیا دیکھنے والےچاہتے تھے کہ دانش آخر میں مر جائے؟ نہیں نا؟ تو پھر؟ سر یہ کام رائٹر کا ہے اسی غریب پر چھوڑ دیجٙے آپ بس کہانی کے مزے لیجئے۔
  12. دیکھنے میں آرہا ہے کہ قارئیں ضوفی نامی کردار کے حوالے سے کچھ زیادہ ہی جذباتی ہورہے ہیں۔ ضوفی اس کہانی کا ایک کردار ہے محض، اس سے زیادہ کچھ نہیں۔ قارئین اپنی اپنی آراء اور اندازے بھی پیش کررہے ہیں کہ ایسا ہوگا اور ویسا ہوگا۔ ڈئیر قارئین۔ اگر کسی ڈرامے میں ویسا ہی ہوجائے جیسا کہ دیکھنے والے کا اندازہ ہو تو سوچئے کہ وہ پھر ڈرامہ ہی کہاں رہا۔ کہانی اور ڈرامہ اپنے دیکھنے اور پڑھنے والے کی سوچ سے بالاتر ہونے کا نام ہے۔ لہذا تسلی سے اس کہانی کو کہانی کی طرح لطف اندوز ہوکر پڑھیے۔ کیا ہونا ہے کیا نہیں۔ یہ رائٹر پر چھوڑ دیجئے۔ کسی کردار کو کیسے استعمال کرنا ہے یہ رائٹر جانتا ہے وہ تو یہ بھی جانتا ہے کہ کسسی ہر دلعزیز کریکٹر کو کس وقت مار دینا ہے جب کہ قارئیں اس کے لئے تیار بھی نہ ہوں۔ تو پلیز کیپ کام دوستوں۔
  13. تو کیا اس کی ایڈیٹنگ اور رائٹنگ آپ کررہے ہیں۔؟
×
×
  • Create New...
DMCA.com Protection Status